گزشتہ ایک سال سے سوشل میڈیا کو فرقہ وارانہ ہتھیا رکے طور پہ استعمال کرتے ہوئے مسلکی اختلافات کو ہوا دی جارہی ہے جس سے فرقہ واریت کے ناسور کے بڑھنے کا خدشہ ہے حکومت کو فوری طور پہ اقدامات اٹھاناہوں گے-مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری زاہد مہدی

گزشتہ ایک سال سے سوشل میڈیا کو فرقہ وارانہ ہتھیا رکے طور پہ استعمال کرتے ہوئے مسلکی اختلافات کو ہوا دی جارہی ہے جس سے فرقہ واریت کے ناسور کے بڑھنے کا خدشہ ہے حکومت کو فوری طور پہ اقدامات اٹھاناہوں گے-مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری زاہد مہدی

ان خیالات کا اظہار امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری زاہد مہدی نے کیا۔
فتنہ پرور اشرف جلالی کی طرف سے فرقہ وارانہ بیان کی پُر زور مذمت کرتے ہوئے کہا تعصب اور گستاخی پہ مبنی بیانات کا مقصد فرقہ واریت کو بڑھانے کے سواء کچھ نہیں ہے۔
حالیہ بیان سے صرف ایک مسلک کا نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ کا دل رنجیدہ ہوا ہے۔
اور کروڑوں انسانوں کی دل آزاری ہوئی ہے ہم قانون نافذ کرنے والے اداروں کو بتادینا چاہتے ہیں کہ اہلبیت علیھم السلام کی شانِ قدس میں میں گستاخی کسی صورت برداشت نہیں کی جا سکتی ایسے شرپسند عناصر کے خلاف قانونی چارہ جوئی ہمارا آئینی و قانونی حق ہے ۔گستاخی میں ملوث شخص کو فوری طور پہ گرفتار کرکے قانون کے مطابق سزا دی جائے۔
انہوں نے مزید کہا ایسے عناصر کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیئے جو مُلک عزیز پاکستان میں مسلمانوں میں تعصب ،نفرت اور فرقہ واریت کو فروغ دیتے ہیں ایسے افراد مُلک اور اسلام کے دشمن ہیں وطن عزیز فرقہ وارانہ بیانات کا متحمل نہیں ہو سکتا، دہشتگردی اور انتہا پسندی کے خاتمہ کیلئے لاکھوں انسانوں کی قربانی دی ہیں ۔

Share this post

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے