تعلیم یافتہ نوجوانوں میں بڑھتی ہوئی شدت پسندانہ سوچ پاکستان کے لئے زہر قاتل ہے :نسیم کربلائی

تعلیم یافتہ نوجوانوں میں بڑھتی ہوئی شدت پسندانہ سوچ پاکستان کے لئے زہر قاتل ہے :نسیم کربلائی

لاہور ()امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی ترجمان نسیم کربلائی نے لاہور میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ روز مردان یونیورسٹی میں انسانیت سوز ظلم پر ہر طالبعلم اشکبار ہے۔نسیم کربلائی کا کہنا تھا کہ پاکستان کی جامعات میں آئے روز انتہاپسندی کے بڑھتے ہوئے واقعات قابل تشویش ہیں ۔نسیم کربلائی نے پاکستان میں شدت پسندی کے جڑ پکڑنے کی وجہ اہلِ علم اور دانشوروں کی طرف سے بوجوہ اس کو فکری اور نظریاتی سطح پر بطور ایک علمی اور فکری چیلنج کے قبول نہ کرنا قرار دیتے ہوئے کہا کہ انتہاپسندی اور دہشت گردی خواہ کسی بھی طرح کی ہو وہ ملک اور معاشرے کے لیے تباہ کن ہوتی ہے ۔جامعات میں بڑھتی ہوئی شدت پسندانہ سوچ پاکستان کے لئے زہر قاتل ہے ۔انہوں نے لاقانونیت کے اس عمل کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں کو کسی ایسے حل کی طرف بڑھنا ہوگا جس سے پاکستان میں شدت پسندی کے بڑھتے ہوئے طوفان پر قابو پایا جاسکے۔انہوں نے کہ اسلام ،امن و سلامتی کا درس دیتا ہے اسلام کے نام پر ایسے افسوناک واقعات اسلام کے حقیقی و روشن خیال چہرہ کو مسخ کرنے کے مترادف ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ قانون کسی قیمت پر انفرادی انصاف کی اجازت نہیں دیتا مردان یونیورسٹی میںصریحا ظلم ہوا ہے جس کی ویڈیوز بھی موجود ہیں تمام قاتلوں کو گرفتار کیا جائے۔

Share this post

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے