پارہ چنار کے محب وطن شہریوں کے تمام مطالبات کو فوری طور پر منظور کیا جائے :مرکزی صدرکی پریس کانفرنس

پارہ چنار کے محب وطن شہریوں کے تمام مطالبات کو فوری طور پر منظور کیا جائے :مرکزی صدرکی پریس کانفرنس

 امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر سید سرفراز نقوی نے پشاور میںاہم  پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  گزشتہ دنوں پھر پاراچنار کے عوام پر بزدل اور پست دشمن نے چھپ کر وار کیا جس میں درجنوں محب وطن شہیدجبکہ بیسیوں افراد زخمی ہوئے یہ المناک سانحہ قیامت صغریٰ سے کم نہیں تھا دھماکہ کے بعد پرامن مظاہرین نے اپنے آئینی و بنیادی حق کے لئے اس ظلم و بربریت کے خلاف احتجاج کیا جس پر ایف سی کے اہلکاروں نے بدترین فائرنگ کی جس کے نتیجہ میں مزید شہادتوں کا واقعہ پیش آیا اس گھمبیر صورتحال پر ملت تشیع پاکستان میں بے چینی پائی جاتی ہے اور تشویش لاحق ہے کہ ایکطرف تو قتل غارت کا سلسلہ جار ی ہے تو دوسری جانب صدائے احتجاج کو بھی دبانے کی کوشش کی جارہی ہے مرکزی صدر سید سرفراز نقوی نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  دھماکہ کے بعد مظاہرین نے اپنے حقو ق کے لئے طویل دھرنا دیا تو مقامی میڈیا کو کوریج اجازت نہیں دی گئی تاکہ ایف سی کی فائرنگ اور دہشتگردوں کی کارروائی کو آشکار نہ کیا جاسکے یہ ایک انتہائی قابل افسوس عمل ہے مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ پاراچنار میں شیعہ نسل کشی جاری ہے اور کرم ایجنسی کے پولیٹیکل ایجنٹ اور سیکیورٹی فورسسز پاراچنار کے مظلوموں کو تحفظ دینے میں مکمل ناکام ہوچکے ہیں، مقامی رضاکاروں کو حفاظتی اقدامات سے روک کر علاقے کو دہشتگردوں اور ان کے سہولت کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے سر فراز نقوی نے کہا آپریشن ردالفساد کے باوجود دہشت گردوں کے سامنے حکومت بے بس اور لاچار ہے۔ صرف لفظی آپریشن کافی نہیں بلکہ عملی طور پر دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو قلع قلمع کرنے کی ضرورت ہے۔  انہوں نے کہا کہ اگرپارہ چنار میں سبزی منڈی دھماکہ کے اصل کرداروں کو سزا مل جاتی تو یہ سانحہ رونما نہ ہوتا ۔ جب تک دہشت گردوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی نہیں کی جاتی تب تک ایسے واقعات ہوتے رہیں گے استحکام پاکستان اور پر امن پاکستان کے لیے تکفیری سوچ کا خاتمہ ناگزیر ہے ۔ سرفراز نقوی نے کہا  پارہ چنار سبزی منڈی دھماکہ اور حالیہ دھماکہ کے بعد انتظامیہ سے مذاکرات کے بعد پارہ چنا رکی سیکورٹی سمیت دیگر مطالبات کی منظوری کی یقین دہانی کروائی گئی تھیتاہم اس پر عمل درآمد نہیںکیا گیا ہم مطالبہ کرتے ہیں دھرنے کے بعد کئے تمام مطالبات کو فوری طور پر منظور کیا جائے اور یہ بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ دہشتگردی کے واقعات میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے اور سہولتکاروں کو گرفتار کیا جائے۔مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ پارہ چنار کے محب وطن شہریوں کے مطالبات منظو ر نہ کئے گئے تو مطالبات کی منظوری تک شدید ردعمل کااظہارکیا جائے گا ۔مرکزی صدر کا ایک سوال کے جواب میں کہنا تھا کہ راحیل شریف کو کسی صورت بھی ملٹری الائنس کا حصہ نہیں بننا چاہئے تھایہ الائنس صرف ایک  خاندان کی حفاظت کے لئے بنایا گیاہے پاکستان کو اس وقت اندرونی و بیرونی سیکورٹی چیلنجز کا سامنا ہے ایسے مشکل وقت میں پاکستان کو غیر جانب دار رہتے ہوئے ملکی استحکام کو ترجیح دینی چاہئے  اور کسی بھی دوسرے ملک کی جنگ میں ہرگز نہیں کودنا چاہئے 

Share this post

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے