شہداء ملت تشیع پاکستان نے شہادت کی فرہنگ کو رواج دیا :علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

شہداء ملت تشیع پاکستان نے شہادت کی فرہنگ کو رواج دیا :علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

شہداء ملت تشیع پاکستان نے شہادت کی فرہنگ کو رواج دیا :علامہ راجہ ناصر عباس جعفری
لاہور میں آئی ایس او کے سالانہ کنونشن میں شب شہداء کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ پاکستان میں شہداء کو دہشت گردی کا نشانہ بنایا گیاآج ان شہداء کی یاد منائی جارہی ہے جو حقیقی شہادت کی فرہنگ کو رواج دینے والے وہ شہداء ہیں ان شہداء نے قوم کو زندگی دی کیونکہ شہداء کا خون ہرگز رائیگاں نہیں جاتا کیونکہ یہ خدا وند متعال کا وعدہ ہے ۔راجہ ناصر عباس نے کہا دشمن کی یہ چال تھی کہ ملت تشیع پاکستان اپنے شہداء اور ان کے افکار کو فراموش کر دیں لیکن ہم نے شہداء کربلاء سمیت تمام شہداء کی یاد کو نہ صرف یاد رکھا بلکہ نسلوں تک منتقل کیا ۔ ہم نے عزاداری کی بدولت شہداء کربلا کی مظلومیت کو بغاوت میں بدلنے والوں کو چودہ سو سال سے زندہ کیا ہے پاکستان کی سرزمین میں 20ہزار سے شیعہ شہید ہیں جبکہ ساٹھ ہزار کی یاد کو بھلا دیا گیا ہم نے شہداء کی مظلومیت کی قدسیت کو زندہ رکھا اس لئے بھوک ہڑتال کیمپ میں تمام مکاتب فکر کے افراد آئے اور ہمارے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔انہوں نے کہا ہم نے یاد شہداء کو تکفریت کے خوف اورپراکسی وارمیں فراموش نہیں کیا انہوں نے نیشنل ایکشن پلان پر عملی اقدات پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہاان عظیم شہداء نے اپنے خون سے اپنی سچائی کے گواہی دی شہداء کے خون نے حکومتی بددیانتی کو بینقاب کر دیا ہے کیونکہ یہ تکفریت حکمرانوں نے پالے اور اب حکمران دہشتگردوں کوختم نہیں انہیں اپنے کنٹرول میں کرنا چاہتے ہیں ۔انہوں نے ہم سے دریافت کیا جاتا ہے آپ نے بھوک ہڑتالی سے کیا پایا تو میں کہتا ہوں ہم نے اپنا فرض ادا کیا کیونکہ فقط کوشش کرسکتے ہیں نتیجہ خدا کی طرف سے ہوتا ہے امام راحل کی زندگی سے بھی ہمیں یہی درس ملتا ہے کہ اپنا فرض کے انجام دہی میں کوتاہی نہ کریں ۔شہید قائد عارف الحسینی پیش رو قائد ہے وہ آج بھی ہمارے قائد ہیں

Share this post

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے